ریکوری میں اضافہ نہ ہونے کی صورت میں متعلقہ افسران کے خلاف تادیبی کارروائی عمل میں لائی جائے گی، ڈائریکٹر جنرل ادارہ ترقیات کراچی

Total
0
Shares

 کراچی ڈیولپمنٹ اتھارٹی کو مالی طور پر مستحکم کرنے کے لئے لازم ہے کہ خامیوں کی نشاندہی کرکے مستقل بنیادوں پر دور کرنے کے لئے تمام تر اقدامات کو ہر صورت یقینی بنایا جائے۔

کے ڈی اے افسران و ملازمین کا ادارہ کی بہتری کے لئے کردار اہم ہے۔ باہمی اتفاق سے تمام افسران و ملازمین ادارہ کو اپنے پیروں پر کھڑا کرنے کے لئے اپنی ذمہ داریوں کا احساس کریں۔

ان خیالات کا اظہار ڈائریکٹر جنرل ادارہ ترقیات کراچی سید شجاعت حسین نے سوک سینٹر میں موجود کانفرنس روم میں اعلیٰ افسران پر مشتمل اجلاس کی صدارت کی۔ اجلاس میں ڈی جی کے ڈی اے سید شجاعت حسین نے ڈائریکٹر فنانس کو ہدایت جاری کی کہ ادارہ ترقیات کراچی 2024-2025 ء سالانہ بجٹ جلد ازجلد تیار کیا جائے تاکہ آئندہ گورننگ باڈی اجلاس میں بجٹ کی منظوری حاصل کی جاسکے۔

علاوہ ازیں ڈی جی کے ڈی اے کو ڈائریکٹر پلاننگ اینڈ اربن ڈیزائن رفیق کھوڑو نے تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ شہر کے مختلف مقامات پر کے ڈی اے کی کسی بھی زمین کی پلاننگ اور اربن ڈیزائن کرنے کے ساتھ ساتھ پارٹ پلانٹ اور دیگر زمین کے معاملات پلاننگ اینڈ اربن ڈیزائن محکمہ کرتاہے۔

پلاننگ اینڈ اربن ڈیزائن سے حاصل کردہ رقم کے ڈی اے ریکوری اکاؤنٹ میں جمع ہوتی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پلاننگ اینڈ اربن ڈیزائننگ شعبہ میں کمپیوٹرز اور دیگر مشینری آلات کی اشد ضرورت ہے، ضرورت پوری ہونے کے باعث محکمہ کی کارکردگی میں مزید نکھار لایا جاسکتا ہے۔ علاوہ ازیں ڈائریکٹر فنانس اینڈ اکاؤنٹس محمد کاشف صدیقی نے ڈی جی کے ڈی اے سید شجاعت حسین کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ فنانس ڈپارٹمنٹ کے ڈی اے کے مختلف ڈپارٹمنٹ کو سروسز فراہم کرتا ہے، ریٹائرڈ افسران و ملازمین کے فنڈز اور تنخواہوں سے متعلق بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ محکمہ کو فنڈز کی ضرورت ہے، ریکوری میں بہتری ہونے کے باعث افسران و ملازمین کی تنخواہوں کی ادائیگی بروقت ہوسکے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ فنانس اینڈ اکاؤنٹس ڈپارٹمنٹ کمپیوٹرائزڈ کے آخری مراحل میں ہے۔

کمپیوٹرائزڈ عمل مکمل ہونے سے افسران و ملازمین کا تمام تر ڈیٹا محفوظ ہوجائے گا۔

انہوں نے کہا کہ عرصہ دراز سے آڈیٹرز کے امتحان نہیں ہوسکے جس پر کام تیزی سے جاری ہے، جلد ہی کے ڈی اے افسران و ملازمین امتحان میں شرکت کرسکتے ہیں۔

ڈی جی کے ڈی اے نے ڈائریکٹر فنانس کو احکامات جاری کئے کہ اخراجات میں کمی لاکر بچت کی جائے تاکہ بچت کی گئی رقم دیگر معاملات میں استعمال ہوسکے۔

ڈی جی کے ڈی اے سید شجاعت حسین کو ڈائریکٹر پارکس محمد زاہد نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ادارہ ترقیات کراچی کے شہر بھر میں 379 پارکس موجود ہیں، 193پارکس میں تجاوزات جبکہ 48 پارکس باؤنڈر والز میں قائم ہیں۔

ڈی جی کے ڈی اے نے تمام پارکس کی رپورٹ تیار کرکے پیش کرنے کے احکامات جاری کئے کہ قبضہ مافیا سے واہگزار کرکے پارکس آباد کرنے کا سلسلہ شروع کیا جائے، پارکس آباد کرنے کے باعث شہر کی خوبصورتی میں مزید اضافہ ہوگا جبکہ 200 کے قریب نرسریز کو کرائے کے لئے نوٹسز جاری کئے جائیں تاکہ ریکوری میں اضافہ ہوسکے۔

ریکوری میں اضافہ نہ ہونے کی صورت میں متعلقہ افسران کے خلاف تادیبی کارروائی عمل میں لائی جائے۔

اس موقع پر ممبر ایڈمنسٹریشن نوید انور، سیکریٹری کے ڈی اے بہزاد عامر میمن، ڈائریکٹر فنانس اینڈ اکاؤنٹس محمد کاشف صدیقی، ڈائریکٹر پلاننگ اینڈ اربن ڈیزائن رفیق کھوڑو، ڈائریکٹر پارکس محمد زائد و دیگر افسران موجود تھے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

You May Also Like

وین ڈرائیورز دوران سفر بچوں کی حفاظت پر خصوصی توجہ دیں، رفیعہ جاوید ملاح

ر فیعہ جاوید، ایڈیشنل ڈائریکٹر (رجسٹریشن)، ڈائریکٹوریٹ آف انسپیکشن اینڈ رجسٹریشن آف پرائیویٹ انسٹی ٹیوشنز سندھ، اسکول ایجوکیشن اینڈ لٹریسی ڈپارٹمنٹ حکومت سندھ کی جانب سے تمام والدین، ڈرائیوروں اور…
View Post

حضرت صاحبزادہ سید محمد متین محبوبی چشتی کے 43 ویں عرس کی تقریبات کا آغاز 23 مارچ سے کیا جائے گا

سلسلہ چشتیہ و پاکستان کے نامور بزرگ خواجہ خواجگان حضرت صاحبزادہ سید محمد متین محبوبی چشتی قلندری دہلوی کے 43ویں عرس شریف کی تقریبات ہر سال کی طرح اس سال…
View Post