نوجوانان مہاجر شہر کے مسائل زدہ عوام کی توانا آواز ہے، مقررین

Total
0
Shares

نوجوانان مہاجر کے مرکزی آرگنائزرزوہیب اعظم نے کہا کہ نوجوانان مہاجر کے اجتماع کی خوشبو سے شہر میں بسنے والی تمام قومیتیں سروراورطمانیت محسوس کررہی ہیں ،مہاجر نوجوان اپنے حقوق کے حصول کیلیے ہر پلیٹ فارم پر بات کریں گے ،نوجوانان مہاجر شہر کے مسائل زدہ عوام کی آواز ہے

انھوں نے کہا کہ یہ بات دنیا جانتی ہے کہ مہاجرقوم نہ ڈرتی ہے نہ جھکتی ہے ،نہ ڈرتی ہے نہ دبتی صرف آگے ہی بڑھتی ہے ،یہ شہر تمام قومیتوں کا گل دستہ ہے ،اس اجتماع میں مہاجروں سمیت تمام قومیتوں کے نوجوان کثیر تعداد میں موجود ہیں

انھوں نے کہا کہ مہاجر نوجوانوں کو علم و ہنر سیکھنا ہی نہیں ہے سکھانا بھی ہے ،آگے بڑھنا ہی نہیں ہے آگے بڑھانا بھی ہے ،ٹانگ نہیں اب ہاتھ کھینچ کر ایک دوسرے کو سہارا دینا ہے ،منزل تک لے جانا ہے،

انھوں نے اعلان کیا کہ مہاجر یوم ثقافت 24دسمبراب عالمی سطح پر بھی بھرپور اندازمیں منایا جائے گا،ان خیالات کا اظہار انھوں نے غیر سیاسی تنظیم ”نوجوانان مہاجر“کے تحت مقامی ہال میں افطار ڈنر سے خطاب میں کیا

انھوں نے کہا کہ نوجوانان مہاجر ہی قوم ،شہر اور ملک کو ترقی کی روشن شاہراہ پر لائیں گے ،جلد ہی تنظیم سازی شروع کی جائے گی ،کراچی ملک کا معاشی انجن ہے ،اسے رواں دواں رکھنا ہماری قومی ذمے داری ہے ،انھوں نے مہاجربزرگوں اور شخصیات سمیت مختلف قومیتوں کےافراد کا اجتماع میں آمد پر خصوصی شکریہ ادا کیا،یوٹیوبر دانیال شیخ اور دیگر سوشل میڈیا انفلونسرز کی قومی خدمات کو سراہا

نوجوانان مہاجر کے مرکزی رہنما عمیر علی مقصودی نے کہا کہ مہاجروں نے ہی وطن بنایا تھا مہاجر ہی وطن بچائیں گے ،سنواریں گے اور تعمیر وترقی میں اپنا سب بڑا حصہ ڈالیں گے

انھوں نے کہا کہ ہمیں غریبوں کا سراونچا کرنا ہے ،تاجروں کا منافع کمانا ضروری ہے ناجائز منافع ظلم ہے ،تاجروں کا خوشحال ہونا ضروری ہے محنت کشوں اور فیکٹری میں کام کرنے والے ملازمین کا بدحال ہونا ظلم ہے

انھوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ شہر کی ہر فیکٹری کی مشینیں چلتی ہیں ،چمنیوں سے دھواں نکلتا رہے،تاجر جس طرح تجارتی سرگرمیوں میں فعال کردار ادا کرتے ہیں اسی طرح سماجی سرگرمیوں میں بھی بڑھ چڑھ کر حصہ لیں ، انھوں نے کہا کہ سرکاری نوکریوں میں شہر کے نوجوانوں کو نظرانداز کرنے کا سلسلہ بند کیا جائے

نوجوانان مہاجر کے مرکزی رہنما فائز علی خان نے کہاکہ شہر میں ڈاکوﺅں کے ہاتھوں مرنے سے بہتر ہے کہ اٹھ کھڑا ہواجائے ، بجلی اور گیس کے مہنگے بلوں پر رونا بند کرکے سوشل میڈیا سمیت ہر فورم پر بھرپوراحتجاج کیاجائے ،مسائل کے حل کیلیے آواز بلند کی جائے ،کیونکہ خاموشی خود اپنے اوپر ظلم ہے

انھوں نے کہا کہ ہمیں اپنے معاشی ،سماجی ،طبی اورتعلیمی حقوق حاصل کرنے کیلیے جڑنا ہوگا،انسانیت کی خدمت عبادت ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

You May Also Like

وین ڈرائیورز دوران سفر بچوں کی حفاظت پر خصوصی توجہ دیں، رفیعہ جاوید ملاح

ر فیعہ جاوید، ایڈیشنل ڈائریکٹر (رجسٹریشن)، ڈائریکٹوریٹ آف انسپیکشن اینڈ رجسٹریشن آف پرائیویٹ انسٹی ٹیوشنز سندھ، اسکول ایجوکیشن اینڈ لٹریسی ڈپارٹمنٹ حکومت سندھ کی جانب سے تمام والدین، ڈرائیوروں اور…
View Post

حضرت صاحبزادہ سید محمد متین محبوبی چشتی کے 43 ویں عرس کی تقریبات کا آغاز 23 مارچ سے کیا جائے گا

سلسلہ چشتیہ و پاکستان کے نامور بزرگ خواجہ خواجگان حضرت صاحبزادہ سید محمد متین محبوبی چشتی قلندری دہلوی کے 43ویں عرس شریف کی تقریبات ہر سال کی طرح اس سال…
View Post