گورنرسندھ سے جسٹس ہیلپ لائن کے اعلیٰ سطحی وفد کی ایڈوکیٹ ندیم شیخ کی قیادت میں ملاقات

Total
0
Shares

گورنرسندھ کامران خان ٹیسوری سے جسٹس ہیلپ لائن کے اعلی سطحی وفد نے ندیم شیخ کی قیادت میں گورنر ہاﺅس میں ملاقات کی۔

ملاقات میں جسٹس ہیلپ لائن کے اغراض و مقاصد اور باہمی دلچسپی کے دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

گورنر سندھ نے کہا کہ قیدییوں کی فلاح اور معمولی جرائم اور جرمانہ ادا نہ کرنے والے قیدیوں کی رہائی کیلئے کام کرنا بڑی خدمت ہے، انہوں نے کہا کہ جسٹس ہیلپ لائن کی معاشرے کے لئے قانون و تعلیم کے شعبوں میں کی خدمات مثالی ہیں، یہی وجہ ہے کہ جسٹس ہیلپ لائن نے نے معاشرے کی بے لوث خدمت کی اعلیٰ مثال قائم کی ہے۔

وفد میں ممتاز وکیل سید اسرار علی، اقلیتی رہنما سلیم مائیکل ایڈووکیٹ اور جسٹس ہیلپ لائن کے سیکرٹری جنرل حارث امین بھٹی بھی موجود تھے۔

سلیم مائیکل ایڈووکیٹ نے جسٹس ہیلپ لائن کے تاریخی مقدمہ “میثاق مدینہ” جس میں جسٹس ہیلپ لائن کی درخواست پر چیف جسٹس سپریم کورٹ نے اقلیتوں کے حقوق پر 32 صحفات پر مشتمل لینڈ مارک ججمنٹ پر تفصیلی بریفنگ پیش کی کامران خان ٹیسوری نے کہا کہ اس سلسلے میں گورنر ہاؤس میں شعبہ قانون بھی موجود ہے اور انہوں نے اس پر عملدرآمد کیلئے موقع پر احکامات بھی جاری کئے۔

گورنر سندھ نے قانون کے شعبہ میں ہر ممکن تعاون کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ جسٹس ہیلپ لائن کے لئے میری خدمات ہر وقت حاضر ہیں۔

اس سے قبل ندیم شیخ ایڈووکیٹ نے گورنر سندھ کو مستقبل کے منصوبوں کے اور چھٹی ویمن لاءکانفرنس اور 36 واں مقابلہ حسن نعت رسول میں شرکت کیلئے خصوصی طور پر دعوت بھی دی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

You May Also Like

وین ڈرائیورز دوران سفر بچوں کی حفاظت پر خصوصی توجہ دیں، رفیعہ جاوید ملاح

ر فیعہ جاوید، ایڈیشنل ڈائریکٹر (رجسٹریشن)، ڈائریکٹوریٹ آف انسپیکشن اینڈ رجسٹریشن آف پرائیویٹ انسٹی ٹیوشنز سندھ، اسکول ایجوکیشن اینڈ لٹریسی ڈپارٹمنٹ حکومت سندھ کی جانب سے تمام والدین، ڈرائیوروں اور…
View Post

حضرت صاحبزادہ سید محمد متین محبوبی چشتی کے 43 ویں عرس کی تقریبات کا آغاز 23 مارچ سے کیا جائے گا

سلسلہ چشتیہ و پاکستان کے نامور بزرگ خواجہ خواجگان حضرت صاحبزادہ سید محمد متین محبوبی چشتی قلندری دہلوی کے 43ویں عرس شریف کی تقریبات ہر سال کی طرح اس سال…
View Post